You are here: فلسطین تل ابیب سے القدس تک اسرائیل کا زیرزمین ریلوے لائن کا منصوبہ تیار
 
 

تل ابیب سے القدس تک اسرائیل کا زیرزمین ریلوے لائن کا منصوبہ تیار

E-mail Print PDF

0Pala8868مقبوضہ بیت المقدس - (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) اسرائیل کے عبرانی ذرائع ابلاغ نے انکشاف کیا کہ صہیونی ریاست نے زیر زمین ریلوے لائن کا منصوبہ راز داری کے ساتھ  تقریبا مکمل کرلیا ہے۔ اس منصوبے کی تکمیل کے بعد جلد ہی بجلی پر چلنے والی ریلوے لائن کا افتتاح کیا جائے گا۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق عبرانی نیوز ویب پورٹل ’القدس 5800‘ نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ زیر زمین ریلوے لائن ایک طرف ہرٹزیلیا سے شروع کرکے القدس تک پہنچائی گئی ہے۔ کئی سال سے جاری اس تعمیراتی منصوبے پر 7 ارب شیکل کی رقم خرچ کی گئی ہے۔

یہ ریلوے لائن نہ صرف اسرائیل کا سب سے گہرا ریلوے ٹریک ہے بلکہ اسے دنیا کا سب سے گہرا ریلوے ٹریک قرار دیا جا رہا ہے۔ توقع ہے کہ اس منصوبے سے روزانہ 85 ہزار مسافر سفر کریں گے ایک گھنٹے میں 4 ہزار اور ایک ماہ میں 20 لاکھ افراد کو سفر کی تیزی ترین سہولت ملے گی۔

الیکٹرک ریلوے لائن  80 میٹر زمین میں گہری ہے۔ اس میں ایک ہی وقت میں تین ریل گاڑیاں چل سکیں گی۔ تل ابیب سے یہ ریل گاڑی القدس تک کا سفر 30 منٹ میں مکمل کرے گی جب کہ ہنگامی حالت میں ایک بوگی میں 2500 افراد کو سوار کیا جاسکے گا۔

فلسطینی تجزیہ نگار اور صہیونی کالونیوں کے امور کے ماہر خلیل تفجکی کا کہنا ہے کہ زیر زمین ریلوے لائن کا منصوبہ دراصل صہیونی کالونیوں کو باہم مربوط بنانے کی صہیونی اسکیموں کا حصہ ہے۔ اس منصوبے کے تحت صہیونی ریاست القدس اور معالیہ ادومیم کالونی کے آباد کاروں کو کم سے کم وقت میں تل ابیب تک رسائی کا موقع فراہم کرے گی۔