You are here: Home
 
 

جنوبی افریقہ نے اسرائیلی ریاست سے تعلقات مزید کم کردیے

E-mail Print PDF

0Pala9387غزہ - (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) ایک ایسے وقت میں جب کہ افریقی ممالک اسرائیلی ریاست کے قریب آ رہے ہیں اور بعض عرب مسلمان ریاستوں کے بھی اسرائیل کے ساتھ خفیہ تعلقات کی خبریں ہیں جنوبی افریقہ نے جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے صیہونی ریاست کے ساتھ اپنے تعلقات مزید کم کردیے ہیں۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق یہ خبر اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے غیرمعمولی اہمیت کے ساتھ نشرکی ہے۔ عبرانی ٹی وی چینل 10  کے مطابق جنوبی افریقہ بہ تدریج اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو محدود کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ اس نے صیہونی ریاست کےساتھ تعلقات کم کر لیے ہیں۔

جنوبی افریقہ کی خاتون وزیرخارجہ ماتی نکوانا ناشابان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کی حکومت کا کوئی ممبر اسرائیل کا دورہ نہیں کرتا۔ ان کا کہنا تھا کہ فلسطینی قوم کی جدو جہد آزادی ہماری جدو جہد ہے۔ جنوبی افریقہ فلسطینیوں کے خلاف صیہونی ریاست کے نسل پرستانہ اقدامات کو قبول نہیں کرتا۔

ایک سوال کے جواب میں جنوبی افریقا کی وزیرخارجہ نے کہا کہ ہمارے فلسطینی دوستوں نے  ہم سے اسرائیل سے تعلقات ختم کرنے کو کبھی نہیں کہا تاہم ان کی طرف سے یہ درخواست آتی رہی ہے کہ ہم اسرائیل کے ساتھ سرکاری اجلاسوں میں شرکت نہ کریں۔

انہوں نے کہا کہ اگرچہ جنوبی افریقہ اور اسرائیل کے درمیان سفارتی تعلقات قائم ہیں مگران میں کسی قسم کی گرم جوشی نہیں پائی جاتی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات محدود کرنے کے لیے بہت سے اقدامات کیے ہیں۔ صہیہونی رجیم کے ساتھ جنوبی افریقہ نے کئی شعبوں میں تعاون ختم اور کئی میں محدود کردیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کے خلاف ڈھائے جانے والے مظالم نے ہماری آنکھوں سے نیند چھین لی ہے۔ ان کا اشارہ فلسطین میں اسرائیلی ریاستی دہشت گردی اور فلسطین میں غیرقانونی صیہونی آباد کاری کی جانب تھا۔