You are here: Home
 
 

اسرائیلی حکومت کا صیہونی آباد کاروں کو آسان شرائط پر اسلحہ دینے کا فیصلہ

E-mail Print PDF

0Pala11468مقبوضہ بیت المقدس (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) اسرائیل کے عبرانی ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ حکومت صیہونی آباد کاروں کو آسان شرائط پر اسلحہ جاری کرنے اور اسلحہ لائسنس کے حصول میں مزید سہولیات دینے کی تیاری کررہی ہے۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ دریائےاردن کے مغربی کنارے اور بیت المقدس میں آباد کردہ یہودیوں بالخصوص دیوار فاصل کے قریب قائم صیہونی کالونیوں کے آباد کاروں کوآسان شرائط پر اسلحہ دیاجائے تاکہ وہ فلسطینیوں کے ممکنہ حملوں سے اپنا دفاع کرسکیں۔

عبرانی اخبار'ہارٹز' کی رپورٹ کے مطابق حال ہی میں وزارت داخلہ کو ایک تجویز پیش کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ صیہونی آباد کاروں کو اسلحہ کے حصول کے لیے شرائط میں نرمی کی جائے۔ اسلحہ جاری کرنے والے مراکز اور اسلحہ چلانے کی تربیت دینے والے ادارے بھی صیہونی آباد کاروں کو سہولیات مہیا کریں۔

رپورٹ کے مطابق غرب اردن اور القدس میں آباد کردہ کم سے کم ایک لاکھ 45 ہزار صیہونی آباد کاروں کے پاس اسلحہ کے لائسنس ہیں اور ان میں سے بیشتر اپنے کام کے اوقات اور مقامات میں اسلحہ ساتھ رکھتے ہیں۔

اخبار کے مطابق حکومت مزید دو لاکھ صیہونی آباد کاروں کو اسلحہ کی تربیت اور لائسنس جاری کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

خیال رہے کہ غرب اردن میں صیہونی آباد کاروں کی تعداد 7 لاکھ 50 ہزار سے زائد ہے۔